جادو کیا ہے؟ جادو کی علامات اور اسکا توڑ

کالا جادو ایک سنجیدہ چیز ہے۔ یہ آپ کی زندگی کو آپ کی آنکھوں کے سامنے تباہ کر سکتا ہے ، اور آپ کو احساس تک نہیں ہوگا کہ آپ کے ساتھ کیا ہو رہا ہے۔

یہ بہت ضروری ہے کہ مختلف نشانیوں کا علم حاصل کیا جائے جو جادو کی وجہ سے مسحور شخص پر ظاہر ہوتی ہیں،تاکہ آپ اس سے پہلے کہ حالات خراب ہو جائیں اس سے چھٹکارا حاصل کر لیں۔

سب سے پہلے یہ جاننا ضروری ہے کہ کالا جادو کیا ہے۔ کالا جادو اس دنیا میں مختلف کاموں یا چیزوں کے حصول کے لیے جنات کے استعمال کا نام ہے ، چاہے قسمت کا حال جاننا یا بتانا ہو ، کسی سے انتقام لینا ہو ، لوگوں میں نفرت پیدا کرنی ہو ، پیسہ ، شہرت یا کوئی جائز یا ناجائز خواہش پوری کرنی ہو۔

کالے جادو کی مختلف قسمیں ہیں جو انسان پر مختلف اثرات مرتب کرتی ہیں۔

جادو آپ کو پریشان کرنے اور وقتا فوقتا آپکی زندگی میں رکاوٹ بننے کے لیے جنات کو بھیجنے کے لیے کیا جا سکتا ہے۔ اس قسم کے جادو کا پتہ لگانا سب سے مشکل ہے کیونکہ جن ہمیشہ آپکے ساتھ موجود نہیں ہوتے ہیں۔

جادو اس لئے بھی کیا جاسکتا ہے کہ آپکی زندگی میں مستقل رکاوٹیں پیدا کی جائیں،اس دوران شیطان جن آپ کے ساتھ مستقل طور پر رہنا شروع کردیتا ہے۔

جادو سے آپ کے جسم کے کسی مخصوص حصے میں ایک ’’ جن ‘‘ بسایا جا سکتا ہے ، جس کی وجہ سے آپ کو اس حصے میں شدید درد اور پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے جس کی ڈاکٹر بھی تشخیص کرنے سے قاصر ہوتے ہیں ۔

جادو جنات کو آپ پر قبضہ کرنے کے لیے بھی کیا جا سکتا ہے ، یہ جادو جنات کو آپ کے جسم پر قبضہ کرنے کی طاقت دیتا ہے۔ اس قسم کے جادو کا پتہ لگانا سب سے آسان ہے لیکن علاج کرنا سب سے مشکل ہے۔

کالے جادو کی علامات

ا۱:قرآن کی تلاوت یا اذان مسحور زدہ شخص کی طرف سے ردعمل کا باعث بنتی ہے۔ جادو جتنا مضبوط ہوگا ، قرآن کی تلاوت یا اذان کی آواز کی وجہ سے مریض میں رد عمل اتنا ہی تیز ہوگا۔

ا۲:عجیب و غریب چیزیں ہوتی ہیں جیسے: اچانک سے بلاوجہ چلنے لگ پڑنا ،ایسی بیماری یا جسم کے کسی مخصوص حصے میں درد جس کی ڈاکٹر تشخیص نہ کر پارہے ہوں اور ہر وقت چیزیں گم ہوجانا وغیرہ،یہ سب علامات جادو کو ظاہر کرتی ہیں۔

ا۳:اچانک سے طبیعت میں انتہائی غصہ یا انتہائی ڈپریشن ظاہر ہوجانا جو پہلے موجود نہیں تھا۔

ا۴:اچانک بالکل مختلف شخص کی طرح حرکتیں کرنے لگنا۔

ا۵:فاسد عادات کا ظاہر ہونا جو پہلے اس شخص میں موجود نہیں تھیں۔

ا۶:غیر فطری اور اچانک کسی خاص جگہ یا شخص سے نفرت محسوس کرنا شروع ہوجانا۔

ا۷:اچانک سے کھانے کی عادات میں تبدیلی جو کہ غیر فطری ہو۔

ا۸:سونے کی عادتوں میں تبدیلی جیسے اچانک رات کو نیند نہ آنا اور فجر کی نماز سے ٹھیک پہلے سو جانا۔

ا۹:عجیب اور خوفناک خواب۔

ا۱۰:رات کو اپنے سینے پر دباؤ جو مریض کو سونے نہیں دیتا۔

ا۱۱:خواب میں سانپ ، بچھو ، کالے کتے ،بھینس اور باقی مختلف جانوروں کو حملہ کرتے ہوئے دیکھنا۔

جادو کی سب سے عام قسم وہ ہے جو کہ شادی شدہ جوڑے کے درمیان نفرت اور پھر طلاق کا باعث بنتی ہے۔

جادو کا علاج/توڑ

جادو کا موثر اور درست علاج وہ ہے جو کہ قرآن و سنت سے ثابت شدہ ہو۔ ضروری نہیں کہ جادو کا علاج کرنے کے لیے آپ کو کسی عامل بابا یا پیر فقیر کے پاس،کسی جاہل یا جادوگر کے پاس جانا ہوگا، جادو کا علاج آپ خود بھی کرسکتے ہیں وہ بھی قرآن و سنت کے دائرہ کار میں رہ کر موثر انداز میں۔

رقیہ

’’رقیہ‘‘رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف سے تجویز کردہ قرآنی آیات اور دعائیں کے ذریعے بیماریوں کا علاج کرنے کی مشق ہے۔ رقیہ بری نظر ، جادو اور یہاں تک جسمانی بیماریوں کا بھی علاج فراہم کرتا ہے۔ قرآن مومن کو روحانی اور جسمانی طور پر ایک کامل سکون فراہم کرتا ہے۔ اس لیے رقیہ ہماری زندگی میں اہم کردار ادا کرتا ہے،اور اسکو زندگی کا اہم جز بنانا چاہئے،اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے: اور کہہ دو کہ حق آگیا اور باطل نابود ہوگیا۔ بےشک باطل نابود ہونے والا ہے،اور ہم قرآن (کے ذریعے) سے وہ چیز نازل کرتے ہیں جو مومنوں کے لئے شفا اور رحمت ہے اور ظالموں کے حق میں تو اس سے نقصان ہی بڑھتا ہے(سورت نمبر 17،ایت 81 تا 82)

ایک علاج فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ ، رقیہ مومنین کے لیے اپنا ایمان مضبوط کرنے اور اللہ تعالیٰ کی ذات پر ایمان اور توحید کی تصدیق کرنے کا ایک بہترین طریقہ ہے .قرآن کے ذریعے علاج کی تلاش اللہ کی کتاب پر مکمل یقین ظاہر کرتی ہے.

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “دو ادوایات کا اچھا استعمال کرو: شہد اور
قرآن۔ ” (ابن ماجہ)

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں: جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بیمار تھے تو جبرئیل علیہ السلام نے آپ صلی اللہ علیہ وسلم پر رقیہ سے علاج کیا۔ (مسلم)

ایک اور حدیث میں امی عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم داخل ہوئے اور ایک عورت کو انہیں رقیہ (ایسے الفاظ جن میں غیر اللہ کو پکارا جا رہا تھا ) کے ساتھ علاج کرتے ہوئے پایا آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “انکا کا علاج اللہ کی کتاب سے کرو۔

ایک بار رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت ام سلمہ رضی اللہ عنہا کے گھر میں ایک لڑکی کو دیکھا جس کے چہرے کا رنگ بدل گیا تھا۔
، تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “اس کا علاج رقیہ سے کرو ، کیونکہ یہ بری نظر سے متاثر ہوئی ہے۔” (بخاری)

عائشہ رضی اللہ عنہا بیان کرتی ہیں کہ جب بھی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بیمار ہوتے تو آپ [قرآن کی آخری 3 سورتیں] پڑھتے اور پھر اپنے جسم پر پھونک مارتے۔ وہ کہتی ہیں: “اپنی آخری علالت کے دوران جس کہ وجہ سے آپ صلی اللہ علیہ وسلم اس دنیا سے تشریف لے گئے، اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم اپنے اوپر پھونک مارتے تھے۔ لیکن جب آپ صلی اللہ علیہ وسلم علالت شدت اختیار کر گئی تو میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو پڑھ کر پھونک مارتی۔ (بخاری)

ایک اور حدیث میں ، آپ رضی اللہ عنہا نے ذکر کیا ہے کہ جب بھی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے خاندان میں سے کوئی بیمار ہوتا ، آپ صلی اللہ علیہ وسلم ان تینوں سورتوں سے ان پر پھونک مارتے۔ (مسلم)

قرآن تمام ذہنی ، روحانی اور جسمانی بیماریوں کے لیے مکمل شفا ہے،دنیا اور آخرت کی تمام بیماریوں کی۔
لیکن ہر ایک کو اسے شفا یابی کے مقصد کے لیے استعمال کرنے کا طریقہ نہیں معلوم ہوتا۔ اگر بیمار شخص قرآن کو صحیح طریقے سے شفا کی غرض کے لیے استعمال کرتا ہے ، اور اسے اپنی بیماری کے خلاف ، ایمان ، مکمل اعتماد اور پختہ یقین کے ساتھ استعمال کرتا ہے،اس کی تمام شرائط کو پورا کرتا ہے تو کوئی بھی بیماری اس کا مقابلہ نہیں کر سکتی۔ ابن القیم رحمہ اللہ

جادو کے توڑ کے لئے رقیہ کا طریقہ

رقیہ کے علاج کے کامیاب ہونے کی شرائط۔

نمبر ۱:نیت

رقیہ ایک دعا ہے ، نیت ہمیشہ یہ ہونی چاہیے کہ میں اللہ سے دعا کررہا ہوں کہ اللہ اپنے کلام پاک کی برکت سے اس برائی کو دور کرے۔

نمبر ۲: یقین

رقیہ پڑھتے ہوئے اللہ پر مضبوط یقین کے ساتھ بلند آواز سے اور واضح طور پر پڑھنا چاہیے ، جو تنہا شفا دینے والا ہے۔

نمبر۳: صبر اور مستقل مزاجی

باقی تمام علاجوں کی طرح ، مستقل مزاجی اور صبر کلیدی ہے۔ مثبت نتائج کے لیے روزانہ کی تلاوت ، دعا اور دیگر علاج کو صبر کے ساتھ مستقل برقرار رکھنا ہو گا۔

رقیہ سے پہلے کے اعمال

  • وضو کرو ، دو رکعت پڑھو اور مخلصانہ دعا کرو۔ خاص طور پر تہجد میں دعا ، یہ اللہ کی طرف سے بہت زیادہ آرام اور مدد لاتی ہے۔کثرت سے اور مخلصانہ استغفار کریں (اللہ سے معافی مانگیں) ، اور گناہوں سے دور رہیں۔ اگر کسی نے کسی پر ظلم کیا ہو یا کچھ بھی ناجائز لیا ہو تو لوگوں کے حقوق کو بحال کرے۔
  • عمل سے قبل صدقہ دیں کیونکہ یہ مصیبت سے بچاتا ہے (بیہقی) اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ نے فرمایا: “صدقہ دے کر اپنے بیماروں کا علاج کرو۔” (بیہقی)
  • گھر سے تصاویر ہٹا دیں۔ کوئی تعویذ جس میں ناجائز عبارت ہو یا اللہ کے سوا کسی کو پکارا گیا ہو اسے بھی نکال کر دریا میں ٹھکانے لگا دیا جائے

رقیہ کے دوران کا عمل

  • رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر درود و سلام بھیج کر رقیہ شروع کریں.
  • رقیہ (دیکھیں پی ڈی ایف) زور سے ، واضح طور پر اور مکمل توجہ کے ساتھ ، کم از کم 3 یا 7 بار پڑھیں۔
  • کوئی بھی مریض براہ راست پڑھ سکتا ہے ، اور ہاتھوں پر پھونک مار کر انہیں جسم پر رگڑ سکتا ہے۔ جسم کے جس حصے میں درد ہو اس پر ہاتھ رکھ کر بھی تلاوت کی جا سکتی ہے۔
  • تلاوت کرکے پانی پر پھونک سکتا ہے۔ منہ کو پانی کے قریب رکھیں ، اس میں سانس لیں اور بار بار اس پر پھونکیں۔ یہ پینے اور نہانے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے (اس کے متعلق مزید تفصیل آنے والے آرٹیکلز میں بیان کی جائے گی)۔ زیتون کا تیل اور دیگر سنت میں موجود ادویات پر پڑھ کر یہ ادویات جسم پر لگائی جا سکتی ہیں۔
  • اگر کوئی تلاوت نہیں کر سکتا تو رقیہ کو سنا جا سکتا ہے۔ اور یہ عمل پوری توجہ کے ساتھ کیا جانا چاہئے۔ اور مریض کو غور سے سننا چاہیے اور اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ وہ سوئے نہیں۔

جاری ہے۔۔۔۔۔

مندرجہ ذیل قرآنی آیات جو کہ سنت سے ثابت شدہ ہے بطور رقیہ مریض خود پڑھے یا کوئی بھی مریض پر پڑھ کر دم کرے، ان شاءاللہ صحت یابی ہوگی گی۔

اس فائل کی ہائی کوالٹی پی ڈی ایف حاصل کرنے کے لئے ڈائونلوڈ بٹن پر کلک کریں

رائٹر کو فالو کریں

Syed Muhammad Ali

Student of Electrical Engineering,Blogger, Website Designer, Graphic Designer, Website Manager and Social Media Manager

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: