جادو اور جنات کیا ہیں؟ جادو اور جنات کی علامات اور اسکا توڑ پارٹ ۲

پہلے پارٹ میں ہم نے جادو کی علامات کے متعلق تفصیل کے ساتھ بات کی، اور قرآن و سنت کے مطابق مکمل علاج کے طریقہ کار کے متعلق جانا،اس حصے میں ہم جادو اور اسکے علاؤہ جنات کے اثرات کے علاج کے متعلق مزید بات کریں گے۔

جنات اللہ کی مخلوق ہیں اور انسانوں کو نظر نہیں آتے۔ انسانوں کی طرح ان میں بھی اچھے اور برے جن ہوتے ہیں۔ برے جنوں کو شیاطین کہا جاتا ہے۔ وہ انسانوں کو نقصان پہنچانے میں جادوگروں کی مدد کرتے ہیں۔ جس ذات نے ان کو پیدا کیا ہے اس کی حفاظت میں ہوتے ہوئے ، ہمیں جنوں سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

آیت الکرسی جنوں کے شر کے خلاف مضبوط ترین تحفظ ہے۔ اس کے ساتھ دیگر قرآنی آیات جو اللہ کی عظمت بڑائی بیان کرتی ہیں یا اس کے عذاب کا ذکر کرتی ہیں وہ بھی انکے شر کے خلاف کارگر ہیں۔

ابن کثیر رحمہ اللہ لکھتے ہیں کہ جادو کا سب سے زیادہ فائدہ مند علاج وہی ہے جو اللہ نے اپنے رسول صلی اللہ علیہ وسلم پر شفاء کے طور پر نازل کیا: سورت الفلق اور سورت الناس۔
اسکے علاؤہ آیت الکرسی کی تلاوت اور ساتھ ہی جنات کے سائے کے شکار شخص کے کان میں اذان پڑھنے سے بھی جنات فوری طور پر بھاگ جاتے ہیں۔

جادو اور جنات کا اضافی علاج

بیان کردہ رقیہ کے طریقہ پر عمل کریں (پی ڈی ایف ڈاؤنلوڈ کرنے کے لئے کلک کریں

رقیہ کی آیات کے ساتھ ساتھ سورت البقرہ کی تلاوت پڑھنی چاہیے جیسا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ سورہ بقرہ پڑھا کرو کیونکہ اسے پڑھنا باعث برکت اور اسے ترک کرناباعث حسرت ہے اور جادوگر اس کے خلاف مقابلے کی طاقت نہیں رکھتے، صحیح مسلم۔

بیری کے پانی سے رقیہ غسل کریں۔ سات سبز پتے (بیری کے درخت کے پتے) پیس کر انہیں پانی میں بھگو دیں۔ اس مرکب پر رقیہ پڑھیں ، اس سے تین گھونٹ پی لیں اور پھر باقی پانی سے غسل کریں۔ اس طریقہ کا ذکر ابن حجر رحمہ اللّٰہ نے کیا ہے،جنہوں نے وہب ابن منبیح رحمہ اللہ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ عمل روزانہ دہرایا جا سکتا ہے جب تک کہ اللہ کی مرضی سے کوئی ٹھیک نہ ہو جائے۔

سنا مکی کا پانی پیئں۔ سنا کو پانی میں ابال کر ٹھنڈا ہونے کے لیے چھوڑ دیں۔ اس مرکب میں شہد بھی شامل کیا جا سکتا ہے۔ اس مرکب پر رقیہ پڑھی جائے اور پھر خالی پیٹ پی جائے۔ یہ سات دن تک کیا جا سکتا ہے۔

حجامہ کروایا جائے ، خاص طور پر جسم کے ان حصوں پر جو درد میں ہیں۔ یہ ضرورت کے مطابق دہرایا جا سکتا ہے۔

سر اور جسم پر تیل کا مساج کریں۔ رقیہ زیتون کے تیل پر پڑھا جا سکتا ہے جسے جسم پر رگڑا جا سکتا ہے ، خاص طور پر وہ حصے جو درد میں ہیں۔ سر پر تیل لگانا (سنت نبوی صلی اللہ علیہ وسلم) انتہائی کارآمد ہے۔ روزانہ ایک چمچ زیتون کا تیل پینا بھی فائدہ مند ہے (میڈیکلی طور پر یرقان کے مریض پینے کی بجائے بس مساج کریں)۔ سیاہ بیج یعنی کلونجی کا تیل بھی اسی طرح استعمال کیا جا سکتا ہے۔

جادو سے متاثرہ افراد اکثر اس کے بارے میں سوچتے ہوئے مغلوب ہو سکتے ہیں ، جادوگروں اور برے جنوں کی خوشی کے لیے۔ تاہم یہ ضروری ہے کہ مریض پرامید رہے۔ کسی کو بھی کبھی مایوس نہیں ہونا چاہیے اور نہ ہی اسے لاعلاج سمجھنا چاہیے۔ بلکہ اللہ کو یاد کرنا چاہیے اور اس پر پختہ امید رکھنی چاہیے۔

طب نبوی میں روحانی و جسمانی علاج کے لیے استعمال ہونے والی اشیاء

کلونجی

درحقیقت کالے بیج میں تمام بیماریوں کا علاج ہے سوائے موت کے۔ (صحیح مسلم) بحثیت مسلمان ہمیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے فرمان پر پختہ یقین ہونا چاہیے، رسول کا فرمان دراصل اللہ کا فرمان ہوتا ہے کیونکہ انبیاء کرام اور رسل علیہم السلام، اللہ کے حکم کے بغیر ایک لفظ بھی منہ سے نہیں نکالتے۔ کلونجی کا استعمال گھروں میں عام کرنا چاہیے،اس کا استعمال آپ بطور سنت و علاج، ہر طرح کے سالن یا چاولوں میں چند دانے ڈال کر کرسکتے ہیں،جس سے نہ صرف ذائقہ بہتر ہوگا بلکہ برکت اور شفا بھی ہوگی۔

حجامہ

جبرائیل علیہ السلام نے مجھے بتایا کہ حجامہ لوگوں کے لیے سب سے زیادہ فائدہ مند دوا ہے۔ (حاکم) حجامہ سال میں ایک بار ضرور لگوائیں،یہ بہت سی بیماریوں سے نجات کا سبب بنتا ہے۔

سنا

“سنا اور شہد کا خوب استعمال کرو ، کیونکہ ان دونوں میں موت کے علاوہ ہر بیماری کا علاج ہے۔” ابن ماجہ

زم زم

زمزم کا پانی جس چیز کے لیے پیا جائے یہ اسی کے لیے ہے۔ (ابن ماجہ)

زمین کی سطح پر بہترین پانی زمزم کا پانی ہے۔ یہ ایک صحت بخش غذا ہے اور بیماریوں کا علاج ہے۔
(طبرانی)

عروہ بن زبیر رضی اللہ عنہ حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا کے متعلق بیان کرتے ہیں کہ وہ زمزم کا پانی ساتھ مدینہ لے جاتی تھیں، اور بیان کرتی تھیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بھی زمزم ساتھ لے جاتے تھے اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم بیماروں پر اسکا چھڑکاؤ کرتے اور پینے کے لئے دیتے۔
(ترمذی)

گائے کا دودھ (کچا)

اللہ نے کوئی بیماری نہیں بنائی جسکا اس نے علاج پیدا نہ کیا ہو سوائے بڑھاپے کے۔ پس گائے کا دودھ پیو کیونکہ وہ ہر قسم کی بوٹیوں کو کھاتی ہیں۔ (نسائی)

القسط الہندی و القسط البحری

القسط ہندی ( کوٹ ) استعمال کرو کیونکہ اس میں سات بیماریوں کے لیے شفاء ہے جن میں سے ایک نمونیہ بھی ہے۔(بخاری)

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ ( خون کے دباؤ کا ) بہترین علاج جو تم کرتے ہو وہ حجامہ لگوانا ہے اور عمدہ دوا عود ہندی کا استعمال کرنا ہے (بخاری)

تلبینہ

عائشہ رضی اللہ عنہا بیمار کے لیے اور میت کے سوگواروں کے لیے تلبینہ ( روا، دودھ اور شہد ملا کر دلیہ ) پکانے کا حکم دیتی تھیں اور فرماتی تھیں کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ تلبینہ مریض کے دل کو سکون پہنچاتا ہے اور غم کو دور کرتا ہے ( کیونکہ اسے پینے کے بعد عموماً نیند آ جاتی ہے یہ زود ہضم بھی ہے ) (بخاری)

زیتون

کھانے میں اور جسم پر لگانے کے لیے زیتون کا تیل استعمال کرو ، کیونکہ یہ ایک مبارک درخت سے ہے۔ (ترمذی)

عجوہ کھجور

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ جو شخص روزانہ چند عجوہ کھجوریں کھا لیا کرے اسے اس دن رات تک زہر اور جادو نقصان نہیں پہنچا سکیں گے۔ علی بن عبداللہ مدینی کے سوا دوسرے راوی نے بیان کیا کہ سات کھجوریں کھا لیا کرے۔ (بخاری)

شہد

پھر ہر قسم کے پھلوں سے اپنی خوراک حاصل کر ، پھر ان راستوں پر چل جو تیرے رب نے تیرے لیے آسان بنا دیے ہیں ۔ ( اس طرح ) اس مکھی کے پیٹ سے وہ مختلف رنگوں والا مشروب نکلتا ہے جس میں لوگوں کے لیے شفا ہے ۔ یقینا ان سب باتوں میں ان لوگوں کے لیے نشانی ہے جو سوچتے سمجھتے ہوں. سورت النحل آیت ۶۹

اکثر پوچھے گئے سوالات

سوال: کیا ہر کوئی رقیہ کر سکتا ہے یا یہ صرف مخصوص لوگوں کے لیے ہے؟

جواب: ایک غلط فہمی ہے کہ رقیہ مخصوص افراد کے لیے مخصوص ہے۔ رقیہ ہر مسلمان کر سکتا ہے اور کرنا چاہیے۔

سوال: کیا رقیہ کی تلاوت کرنا اسکے سننے سے بہتر ہے؟

جواب: اگر کوئی مناسب طریقے سے کر سکتا ہے تو خود پڑھنا چاہیے۔ تاہم رقیہ کو طویل عرصے تک کرنے کی ضرورت پڑسکتی ہے اور اس دوران کئی مرتبہ تلاوت کرنا مشکل ہوجاتا ہے یا مریض کا مرض شدید ہونے کی صورت میں وہ پڑھ نہیں پاتا۔ اس لیے وہ رقیہ آڈیو سن سکتا ہے یا کوئی اس پر رقیہ کی تلاوت کر سکتا ہے۔

سوال: کتنی دیر تک رقیہ پڑھا جائے یا سنا جائے؟

جواب: رقیہ کو دن میں چند گھنٹے سنیں۔ مثالی طور پر سننے والے کو دوسری سرگرمیاں روکنی چاہئیں اور رقیہ پر توجہ مرکوز کرنی چاہیے جب تک کہ وہ بہتر نہ ہو جائے۔ یہ بیماری کی شدت/جادو/بری نظر پر منحصر ہے کہ اس کو کتنے دن سنا جائے، اس میں کئی دن یا اس سے بھی زیادہ وقت لگ سکتا ہے۔

سوال:رقیہ کی تلاوت یا سننے سے کوئی فرق نہیں پڑ رہا۔

جواب: اگر رقیہ کی تلاوت یا سننے سے کوئی فرق نہیں پڑ رہا ہے ، تو پڑھنے یا سننے والے کو اس کے یقین اور نیت پر سوال اٹھانا چاہیے۔ اس کو استغفار کرنا چاہیے (اللہ سے معافی مانگنا چاہیے) کیونکہ کوئی ایسا گناہ ہو سکتا ہے جو اللہ کی مدد کو روک رہا ہو۔ استغفار تمام بند دروازے کھولتا ہے۔

سوال: کسی کو کیسے پتہ چلے گا کہ وہ بری نظر وغیرہ سے متاثر ہیں؟

جواب: یہ جاننے کے لیے کہ آیا کوئی مصیبت میں مبتلا ہے اس کا بہترین پیمانہ قرآن ہے۔ کوئی بھی چیز قادر مطلق کے طاقتور اور اعلیٰ ترین الفاظ سے نہیں چھپ سکتی۔ رقیہ کی تلاوت یا سنتے وقت درد محسوس ہو سکتا ہے۔ کوئی بے چین یا خوفزدہ بھی محسوس کر سکتا ہے۔ دیگر علامات میں خارش ، قے ، اسہال ، بخار ، پسینہ آنا ، پیشاب کرنے کی خواہش یا نیند کا احساس شامل ہوسکتا ہے۔ اگر یہ علامات پیدا ہوتی ہیں تو ، رقیہ کی تلاوت کرتے رہیں یا سنتے رہیں ، خاص طور پر وہ آیت جو ان علامات کو بڑھا دیتی ہے۔

سوال: اگر متاثرہ شخص رقیہ پڑھنے یا سننے سے انکار کرتا ہے۔

جواب: جو شخص رقیہ کو نہیں سننا چاہتا اسے خود کو مجبور کرنا چاہیے کیونکہ شیطان انہیں علاج سے روک رہا ہے۔ اگر یہ اب بھی مشکل میں ہے ، تو کوئی اس کی طرف سے تلاوت کرسکتا ہے اور پانی اور تیل پر پھونک سکتا ہے۔ اس کے بعد مصیبت زدہ شخص کو یہ پینا اور استعمال کرنا چاہیے۔

سوال: کیا بیماریوں کا علاج صرف رقیہ سے ہونا چاہیے؟

جواب:جادو اور بری نظر اکثر جسمانی بیماریوں کا سبب بن سکتی ہے۔ ان کا میڈیکلی اور رقیہ کے ساتھ علاج کرنے کی ضرورت ہے۔ روایتی ادویات کے ساتھ ساتھ ، انسان کو صحت مند طرز زندگی اپنانا چاہیے اور کم صحت مند کھانے کے سنت میں موجود نسخے پر عمل کرنا چاہیے۔ ہماری کھپت اور اسے حاصل کرنے کے ذرائع بھی حلال ہونے چاہئیں۔ رقیہ کے بعد ، انسان کمزوری محسوس کر سکتا ہے۔ تلبینہ سمیت زیادہ توانائی والی غذائیں کھانا مفید ہے۔

سوال:کیا قرآن میں کوئی مخصوص آیت ہے جو زیادہ اثر کرتی ہے؟

جواب: قرآن میں رقیہ کی بہت سی آیات ہیں۔ سب سے مضبوط سورہ فاتحہ ، آیت الکرسی اور قرآن کی آخری 3 سورتیں ہیں۔ اگر ممکن ہو تو گھنٹوں ان کو سنیں، اور کم از کم اگر زیادہ نہیں تو 7 بار ان کو ضرور دہرایا جائے۔ ان ساتھ کوئی دوسری آیات بھی شامل کی جاسکتی ہیں جن میں اللہ کی عظمت اور وحدانیت کا ذکر ہے جیسے2: 164 ، 3:18 ، 7:54 ، 23: 118 ، 72: 3 ، 37: 1-10 ،59:24 اور سورہ الملک اور الرحمن۔

سوال: رقیہ غسل کیا ہے؟

رقیہ غسل وہ عمل ہے جس کوئی مریض پانی میں غسل کرتا ہے جس پر تلاوت کی جاتی ہے۔ پانی پر رقیہ پڑھتے وقت ، اپنا منہ پانی کے قریب رکھنا چاہیے ، پانی میں سانس لینا چاہیے اور بار بار اس پر پھونکنا چاہیے۔ مثبت نتائج کے لیے روزانہ غسل کرنا چاہیے۔ مزید شدید پریشانیوں کی صورت میں ، علامات غائب ہونے تک روزانہ غسل جاری رکھنا چاہیے۔

اللہ پر بھروسہ رکھنا

عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما نے کہا: ایک دن میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پیچھے اونٹ پر سوار تھا اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: بیٹا میں تمہیں کچھ الفاظ سکھاتا ہوں۔ اللہ کو یاد رکھو اور وہ تمہیں یاد رکھے گا، اللہ کو یاد رکھو اور تم اسے اپنے سامنے پاؤ گے،جب مانگو تو اللہ سے مانگو،جب مدد مانگو تو اللہ سے مدد مانگو،جان لو کہ اگر قوم تمہیں کسی چیز سے فائدہ پہنچانے کے لیے اکٹھی ہو جائے تو وہ تمہیں صرف اس چیز سے فائدہ پہنچائے گی جو اللہ نے تمہارے لیے لکھ دی ہے، اگر وہ تمہیں کسی چیز سے نقصان پہنچانے کے لیے اکٹھے ہوتے ہیں تو وہ تم کو صرف اس چیز سے نقصان پہنچا سکتے ہیں جو اللہ نے تمہارے خلاف پہلے ہی لکھ دیا ہے،قلم اٹھا لیے گئے ہیں اور صفحات خشک ہو چکے ہیں۔ (ترمذی)

Syed Muhammad Ali

Student of Electrical Engineering,Blogger, Website Designer, Graphic Designer, Website Manager and Social Media Manager

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: