جب یاسر شاہ نے تاریخ رقم کی

ایک منظر آپ کو دکھانا چاہتا ہوں، آئیے دیکھتے ہیں

اشتہارات


Qries

یہ آسٹریلیا میں ایڈیلیڈ اوول کا میدان ہے جو اس وقت تماشائیوں کی کمی کا شکوہ کرتا نظر آ رہا ہے، یہ پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین ہونے والی ٹیسٹ سیریز کا آخری میچ ہے، کینگروز کی جانب سے چھوٹے قد کے بڑے شیطان ڈیوڈ وارنر کی ناٹ آؤٹ ٹرپل سنچری کی بدولت 589 رنز کا بڑا ٹوٹل سکور بورڈ پر جگمگا رہا ہے ۔

پاکستان کا ٹاپ آرڈر یکسر ناکامی کا شکار ہوا، نہ امام کی اقتداء راس آئی، نہ ہی اظہر کا تجربہ کام آیا، مسعود بھی شان سے کھیل نہ سکا تو اسد بھی شفیق بن نہ سکا، افتخار پر بھی فخر نہ ہوا تو رضو میاں کا ٹیلنٹ بھی نظر نہ آیا ۔

89/6 سکور تھا جب بابر کو یاسر شاہ نے جوائن کیا، بہترین اور شاندار 97 رنز کی باری کھیل کر جب بابر رخصت ہوا تو پاکستانی امیدوں کے چراغ بجھ چکے تھے۔
مگر یہ یاسر شاہ کا دن تھا، پیٹ کمنز کی دھلائی کی، سٹارک کو رگڑا، ہیزل ووڈ کا جوش ٹھنڈا کیا اور ناتھن کی لائن و لینتھ خراب کی ۔ ہر بری گیند کا انتظار کیا اور باؤنڈری کے پار پہنچایا، بیک فُٹ پنچ، لیٹ کٹ، سویپ شاٹ اور قدموں کا بہترین استعمال 😘 سبھی کچھ تو تھا اس شاندار باری میں

اور بالآخر یاسر شاہ پہنچا *99 رنز پر، کپتان ٹم پین نے گیند تھمائی ہیزل ووڈ کو، دل کی دھڑکن رک سی گئی، میدان میں خاموشی اتنی کہ سوئی گرنے کی آواز بھی گویا محسوس ہو۔

ہیزل ووڈ نے بھاگنا شروع کیا، ایمپائر مائیکل گف کو کراس کیا اور گیند کی
یاسر شاہ نے پاؤں آگے کو نکالا اور مڈ آن کی طرف گیند ہوا میں اچھال دی، دل دھڑکنا بھول گیا کہ فیلڈر موجود تھا

مگر

گیند اس کی پہنچ سے دور گری، یاسر شاہ نے بھاگ کر ایک رن مکمل کیا اور یوں تاریخ رقم ہو گئی، ہوا میں چھلانگ لگا کر بلا لہرایا، ہیلمیٹ اتارا، دستانے اتارے اور رب کے حضور سجدہ ریز ہو کر شکر ادا کیا ۔ تماشائی داد دے رہے تھے، پویلین میں بیٹھا پاکستانی سکواڈ اپنے قدموں پر تھا اور کمنٹیٹر چِلا رہے تھے ۔

یہ دن ایک یادگار دن بن گیا، یاسر شاہ اپنے بڑھاپے میں سردیوں کی کسی لمبی رات میں اپنے پوتے پوتیوں کا خون گرمانے کیلیے کہانی تیار کر چکا تھا ۔

اس جوان نے وہ کام کر دکھایا جو بڑے بڑے کھلاڑی نہ کر سکے۔

مصباح الحق سے نہ ہو سکا تو روٹ کیلیے بھی جوئے شیر لانے کے مترادف ہے، دھونی کی کوشش بھی رائیگاں گئی تو گھوتم کیلیے یہ بات گھمبیر رہی، میکولم بھی اس کی حسرت لیے میدان سے رخصت ہوئے تو روہت بھی اب تک شرمو شرمی سے منہ چھپاتے ہیں ۔

جی ہاں ۔۔۔! ان سب سے پوچھا جائے کہ آپ کے ریکارڈز کی پٹاری میں آسٹریلیا کے خلاف آسٹریلیا میں ہی ٹیسٹ سنچری موجود ہے؟ تو یہ سب منہ چھپاتے نظر آئیں گے ۔

یہ آج کی تاریخ میں 2019 کی سہ پہر کا واقعہ تھا۔

OnThisDay #YasirShah #PAKvAUS

0 0 ووٹس
Article Rating
سبزکرائب
مطلع کریں
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
تمام کمنٹس دیکھیں
0
Would love your thoughts, please comment.x
%d bloggers like this: