افسانہ نہیں حقیقت

جمعہ کے روز شہر سے دور ایک گاؤں میں کچھ ذاتی کام سے جانا ہوا۔فراغت کے بعد جب واپسی کے لیے روانہ ہونے لگا تو دیکھا وہاں کے ایک بزرگ کا چہرہ کچھ مرجھایا ہوا ہے۔

اشتہارات


Qries

میں نے قریب ہو کر دریافت کیا چاچا جی طبیعت صحت تو

ٹھیک ہے ناں؟کہتے ہیں جی شاہ جی الحمد للہ ٹھیک ہے۔میں نے کہا لیکن آپ کا چہرہ جو ہمیشہ ہشاش بشاش رہتا ہے آج ویسا نہیں ہے، کوئی پریشانی کی بات ہے تو آپ مجھ سے شئیر کر سکتے ہیں مجھے اپنا بیٹا ہی سمجھیں۔تو وہ بزرگ کہنے لگے شاہ جی اللہ آپ کے والد محترم کو جنت میں اعلیٰ مقام عطاء فرمائے ہم نے زندگی ان کے ساتھ گزاری ہے اور ان کا پیار محبت ہمارے ساتھ ایسا تھا کہ کبھی محسوس نہیں ہونے دیا کہ ہم غیر ہیں۔ (یعنی خلوص محبت) اور انہی کی بدولت ہم آپکو اپنے بچے ہی سمجھتے ہیں۔میں نے کہا بے شک یہ آپکی محبت ہے لیکن آپ کے چہرے پر پریشانی دیکھ میرا بھی دل اداس ہو رہا ہے تو بتائیں کیا پریشانی ہے؟کہنے لگے یہ جو مہنگائی کا وزیر اعظم بیٹھا ہے جس کی حکومت میں مہنگائی کے سارے ریکارڈ ٹوٹ گئے ہیں، سارے لوگ مہنگائی کو رو رہے ہیں اور عمران خان کو بد دعائیں دے رہے ہیں لیکن اسکی بھی تو کوئی اچھی بات ہوگی؟مجھے لگا شاید مہنگائی کا شکوہ کر رہے ہیں میں کہنے لگا ہاں جی چاچا جی مہنگائی تو بہت… ابھی ہی کہا تھا کہ وہ پھر بولے…جب سری لنکا حکومت نے فیصلہ کیا کہ جیسے وہ اپنے لوگوں کی ڈیڈ باڈیز انکے مرنے کے بعد جلا دیتے ہیں ایسے مسلمانوں کی ڈیڈ باڈیز بھی انکے مرنے کے بعد جلا دی جائیں گی۔ ( جنوری، فروری 2021 میں لنکن حکومت نے کورونا وائرس سے مرنے والے تمام لوگوں کی ڈیڈ باڈیز جلانے کا فیصلہ کیا تھا جس میں مسلمان بھی شامل تھے)تو اس وقت یہی وزیراعظم عمران خان وہاں سری لنکا گیا اور ان کے وزیراعظم سے کہا کہ اسلام میں انسان کی بڑی قدر ہے چاہے وہ زندہ ہو وفات پا جائے ۔

اور اسلام نے ہی انسان کو یہ عزت دی ہے کہ اس کے جسم کو مرنے کے بعد عزت و احترام کے ساتھ دفنایا جاتا ہے۔وہ بزرگ اپنی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے بولے تو عمران خان نے اس وقت جا کر سری لنکن حکومت سے فیصلہ واپس لینے کا کہا جس سے ہمارے مسلمان بھائی بہنوں کو جلانے کی بجائے عزت سے دفنانے کا حق مل گیا۔اس وقت یقیناً سری لنکن حکومت نے سوچا ہوگا کہ اسلام جب مردہ انسان کی اتنی عزت کرتا ہے تو زندہ انسان کی اسلام میں کتنی قدر ہوگی۔بزرگ اپنی آنکھوں میں آنسوؤں کے ساتھ گویا ہوئے کہ آج جب پاکستان میں غلط ملط الزام لگا کر، قانون کو اپنے ہاتھ میں لے کر ایک سری لنکن انسان کو زندہ جلا دیا ہے تو اب کون سے اسلام کا پیغام سری لنکا میں پہنچا ہوگا؟اب سری لنکا کے لوگ کیا سمجھیں گے کہ اسلام کس قدر انسانی جان کی قدر کرتا ہے؟شہر سے دور ایک گاؤں میں عمر رسیدہ شخص کے ان الفاظ نے مجھے بالکل گونگا کر دیا اور مجھے سوچنے پر مجبور کر دیا کہ واقعی ہم کس اسلام پر عمل پیرا ہیں اور کس اسلام کی تبلیغ لر رہے ہیں؟اگر سچ کہوں تو میرے پاس بھی اس بات کا جواب کوئی نہیں تھا کیونکہ ہمارے معاشرے میں بڑھتا ہوا عدم برداشت کا رویہ اس خطرناک حد تک جا پہنچا ہے کہ ہم اپنی ذاتی انا کی تسکین کیلئے اسلام کو بدنام کرنے میں بالکل نہیں ہچکچاتے لیکن کبھی کبھار کچھ الفاظ کا سہارا لینا مجبوری ہوتی ہے اس لیے میں نے کہا واقعی غلط ہوا ہے اور حکومت اس پر کاروائی اچھے طریقے سے کر رہی ہے امید ہے بہت جلد ہی ان لوگوں سزا سنائی جائے گی۔ یہ کہتے ہوئے میں نے اپنی بات ختم کر دی لیکن ابھی تک سوچ رہا ہوں کہ ہم کیسے مسلمان ہیں اور کیسے عاشق رسول اللہﷺ️ ہیں؟ ہماری باتوں اور اعمال میں سو فیصد تضاد ہوتا ہے حالانکہ ہم جانتے ہیں کہ کل کو ہمارے اعمال پر ہی فیصلے ہوں گے کہ کون عاشق رسول اللہﷺ️ ہے اور کون نہیں۔اور ہماری باتوں اور اعمال میں جو سو فیصد تضاد ہے یہ منافقت کی کی بھی دلیل ہے جبکہ ہمیں معلوم ہونا چاہئے کہ قرآن کریم میں منافق کیلئے بہت بڑی وعید سنائی ہے۔ إرشاد باری تعالیٰ ہے :-اِنَّ الْمُنٰفِقِیْنَ فِی الدَّرْكِ الْاَسْفَلِ مِنَ النَّارِۚ-وَ لَنْ تَجِدَ لَهُمْ نَصِیْرًاۙ(۱۴۵)ترجمہ کنزالعرفان، ( بیشک منافق دوزخ کے سب سے نچلے طبقے میں ہیں اور تو ہرگز ان کا کوئی مددگار نہ پائے گا۔)تو قارئین کرام آپ سے یہی درخواست ہے کہ اور کچھ نہیں تو دو کام لازمی کریں،1۔ اسلام پر ویسے ہی عمل کریں جیسے عمل کرنے کا حکم دیا گیا ہے2۔ اسلام کو بدنام کرنے کی غلطی بالکل نہ کریں ۔ اللّٰہمَّ اھْدِنَا فِیْ مَنْ ھَدَیْتَ، وَعَافِنَا فِیْ مَنْ عَافَیْتَ، وَتَوَلَّنَا فِیْ مَنْ تَوَلَّیَتَ، وَبَارِکْ لَنَا فِیْ مَا أَعْطَیْتَ، وَقِنَا شَرَّ مَا قَضَیْتَ۔ آمین ثم آمین

Syed Moin uddin Shah

Syed Moin uddin Shah Ms. Management Sciences Islamia University Bahawalpur Follow his Twitter account http://twitter.com/BukhariM9‎

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: