27 فروری کو کیا ہوا تھا

ستائس فروری کچھ یاد آیا؟؟؟
جی ہاں 2019 کی تو بات ہے
16 فروری کو بھارت نے مقبوضہ کشمیر کے علاقے پلوامہ میں کاروائی کرتے ہوئے اپنے 44 فوجیوں کو جہنم واصل کیا اور الزام پاکستان پر ڈالا گیا پاکستان میں موجود جیش محمد تنظیم کو اس کا زمہ دار ٹہرایا گیا حملے کا مقصد اسی سال ہونے والے انتخابات میں مینڈیٹ حاصل کرنا تھا پاکستان نے الزام مسترد کرتے ہوئے شواہد کا مطالبہ کیا جن کے بنا پر کاروائی کی جاسکے لیکن بھارتی میڈیا اور سیاستدان مسئلے کو ہوا دیتے رہے کیونکہ ان کا مفاد اسی سے وابستہ تھا چنانچہ ہر گزرتے دن کے ساتھ بھارتی حکومت پر دباؤ بنتا گیا بلکہ دباؤ کیلئے ماحول بنایا گیا اور بالآخر چھبیس فروری کو آپریشن شروع ہوا بھارتی فضائیہ اڑان بھری تو پاک فضائیہ بھی متحرک ہوئی اور بھارتی جہازوں کا پیچھا کیا اور انہیں بھگادیا جلدی میں بھارتی جہاز اپنا پے لوڈ گراگر رفو چکر ہوئے اس پے لوڈ سے انیس درختوں کو نقصان پہنچا جبکہ ایک کوا جاں بحق ہوا بھارتی میڈیا نے آسمان سر پر اٹھالیا کہ ان کا آپریشن کامیاب ہوگیا ہے انہوں نے ساڑھے تین سو سے زائد دہشتگردوں کو نشانہ بناکہ بھارتی فوجیوں کا بدلہ لے لیا ہے اسی دن پاک فوج کے ترجمان نے بھارتی دعؤوں کو مسترد کرتے ہوئے عالمی میڈیا اور سفراء کو جائے وقوعہ کے دورے کی دعوت دی اور ساتھ ہی بھارت کو جوابی کاروائی سے آگاہ کرتے ہوئے سرپرائز دینے کا اعلان کیا ان کے الفاظ یہ تھے ” جگہہ اور وقت کا تعین ہم کریں گے بس تم سرپرائز کیلئے تیار رہنا” اگلے ہی دن دن کے روشنی میں پاک فضائیہ کے جانبازوں نے اڑان بھری اور مقبوضہ کشمیر میں جاکہ ٹارگٹس تباہ کئے جبکہ کچھ جگہوں پر ٹارگٹ لاک کرکہ انہیں خبرادر کیا اور واپس چلے آئے بھارتی جو کہ دن کے وقت آنے کا سوچ بھی نہیں سکتے تھے تیار ہوگئے پاک فوج کے شاہین انہیں اشتعال دلانے کیلئے بارڈر کے اس پار گئے بھارتیوں نے پیچھا کیا اور لائن آف کنٹرول کو کراس کرتے ہی وننگ کمانڈر نعمان علی نے مزائیل داغ دیا اور بھارتی لڑاکو جہاز مار گرایا جس میں مشہور زمانہ چائے سپشلسٹ ابھی نندن موجود تھے جبکہ سکواڈرن لیڈر حسن صدیقی نے ایس یو 30 کو مار گرایا پاک فوج نے باقاعدہ ویڈیو ثبوت دکھایا.
جبکہ بھارتی میڈیا پر ایک نامعقول خبر چلی کہ بھارت نے پاکستان کے ایف 16 فائٹر فالکن کو مار گرایا ہے جس کی تردید ایف 16 بنانے والی کمپنی نے تیارے گننے کے بعد کی
بیش قیمت چائے کا ایک کپ پینے کے بعد ابھی نندن پاک فوج کی تعریف کرتے ہوئے واپس چلے گئے بلکہ بھیج دئیے گئے وہاں پر انہیں ویر چکر کا ایوارڈ دیا گیا شائد یہ ایوارڈ، ابھی نندن کو اپنے جہاز کو پاکستانی میزائل پر دے مارنے کے عوض ملا ہو

پاک فوج شعبہ تعلقات عامہ کے ڈائرکٹر جنرل کے آفیشل اکاؤنٹ سے 27 فروری کے حوالے سے کی گئی ٹویٹ


بہر کیف یہ تھا پاکستان کا سرپرائز اور ہم اسے بھارتیوں کو یاد دلاتے رہیں گے.

رضوان احمد

Freelance journalist Twitter account https://twitter.com/real_kumrati?s=09

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: