معاشی ایمرجنسی کیا ہے؟؟؟

ملک میں فنانشل ایمرجنسی لگانے کی باتیں ہورہی ہیں تو لوگ پوچھ رہے ہیں کہ فنانشنل ایمرجنسی کیا ہوتی ہے۔۔

آیئن کے آرٹیکل 232 سے لیکر 237 تک ایمرجنسی کے متعلق شقیں ہیں جس میں آرٹیکل 235 فنانشنل ایمرجنسی کے بارے میں ایڈریس کرتا ہے۔ اگر ملک میں اکنامک کرائسسز ہیں تو اس وقت صدر اپنے گورنرز سے مشورہ کرکے ملک میں اکنامک ایمرجنسی نافذ کرسکتا ہے۔

اب اگلا سوال یہ فنانشنل ایمرجنسی میں ہوتا کیا ہے تو یاد رکھیں ایمرجنسی میں بہت سی چیزیں ہوسکتی ہیں جو کہ اکنامک کرائسسز کی نوعیت کو دیکھ کر کی جاتی ہیں اور ضروری نہیں ہوتا کہ وہ سب کچھ ہی کیا جائے۔۔یہ چیزیں عام عوام کے لیے نقصان دہ ہوتی ہیں۔خصوصا اوور سیز پاکستانیوں کے لیئے۔۔میں ان سب چیزوں کو ڈسکس کردیتا ہوں۔

1۔ فنانشنل ایمرجنسی لگنے کے بعد تمام فارن اکاونٹس سیز کردییے جاتے ہیں یعنی لوگ ملک سے اپنا پیسہ باہر نہیں لیجاسکتے۔ اس سے اوور سیز پاکستانیوں کے جو پیسے پاکستانی اکاونٹس میں ہوتے ہیں وہ ملک سے باہر نہیں جاسکتے ساتھ ہی ان کے اکاونٹ منجمد کر دیئے جاتے ہیں۔۔۔

2۔ عام عوام کو بنیادی حقوق جو کہ آیئن دیتا ہے وہ معطل کردیئے جاتے ہیں یعنی پہلے ہی اس قوم کو حقوق نہیں مل رہے اور جو برائے نام آئین میں لکھے ہوئے ہیں ان سے بھی انسان محروم ہوجاتا ہے۔ ایسے میں اگر گورنمنٹ کوئی سخت قسم کا ٹیکس لگانا چاہے تو وہ لگاسکتی ہے اور اس کو کسی عدالت میں چیلنج نہیں کیا جاسکتا۔ جیسے اگر پٹرول پر 50 روپے لیوی لگادے تو اس کو کہیں چیلنج نہیں کیا جاسکتا۔۔

3۔ ملازمین کے لیے اس لحاظ سے نقصان دہ ہوتا ہے کہ ان کو بیسک تنخواہ کے بعد ان کے کچھ الاونسزز بند کردیئے جاتے ہیں۔

4۔ پراپرٹیز کے حوالے سے بہت سختی ہوجاتی ہے۔۔اور اس کے علاوہ کچھ چیزیں بینکنگ سیکٹر سے متعلق بھی ہیں جن کو لکھنے کا فی الحال میرا دل نہیں کررہا۔۔کیونکہ میری طبعیت کافی خراب ہے۔۔

پھر بتادوں ضروری نہیں ہوتا کہ یہ سب چیزیں اپلائی ہوں صرف اکنامک کرائسز کی صورتحال کو دیکھ کر فیصلہ کیا جاتا ہے کہ عوام کی ڈھولکی کیسے اور کس طرح بجانی ہے۔۔۔

Jabbli Views
فالو کریں

Jabbli Views

جبلی ویوز ایک میگزین ویب سائٹ ہے، یہ ایک ایسا ادارہ ہے جس کا مضمون نگاری اور کالم نگاری کو فروغ دینا اور اس شعبے سے منسلک ہونے والے نئے چہروں کو ایک پلیٹ فارم مہیا کرنا ہے،تاکہ وہ اپنے ہنر کو نکھار سکیں اور اپنے خیالات دوسروں تک پہنچا سکیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: