ننھی قیدی…. سوشل میڈیا پر گرما گرم بحث

شہباز گل کے ڈرائیور کی بیٹی کی قید میں وائرل تصویر پر اسلام آباد پولیس کا ردعمل بچی شہبازگل کے ڈرائیور کی نہیں اسلام آباد پولیس

یاد رہے سوشل میڈیا پر شہباز گل کے ڈرائیور کی ننہی شیرخوار بچی کی تصویر وائرل ہوئی ہے جو اپنی ماں کے ساتھ پابند سلاسل ہے سوشل میڈیا پر عوام آپے سے باہر ہے عوام کے جانب سے رسپانس کو دیکھتے ہوئے اسلام آباد پولیس کو میدان میں اترنا پڑا اسلام آباد پولیس کے آفیشل ٹویٹر اکاؤنٹ سے کہا گیا کہ
” ‏شہباز گل کے ڈرائیور کی بیوی کی سوشل میڈیا پر تصویروائرل ہونے کا معاملہ۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصویر شہباز گل کے ڈرائیور کی بیوی کی نہیں۔یہ تصویر پہلے ہی کسی اور صوبے کے حوالات کی ہے اور ویب سائٹس پر اپ لوڈ ہو چکی ہے۔
‏انٹرنیٹ سے پرانی تصویر کو اٹھا کر اپ لوڈ کرکے عوام میں اشتعال اور غلط معلومات پھیلائی جارہی ہیں۔قانون کی نظر میں مرد اور عورت برابر ہیں اور کسی بھی تفریق سے بالاتر ہے۔جرم میں اعانت کرنے والوں اور شواہد کو چھپانے والوں سے قانون کے مطابق نمٹا جائے گا۔
‏قیاس آرائیوں سے گریز کریں اور قانون کی مدد کریں۔

شہریوں سے گزارش ہے کہ ایسی غلط معلومات کو پھیلانے سے گریز کریں۔”

جس پر ردعمل دیتے ہوئے اکثر سوشل میڈیا صارفین نے دہرا اور دھمکی آمیز رویہ قرار دیا اور ثبوت کے طور پر متفرق تصاویر بھی پوسٹ کیں ایک صارف نے لکھا ” لگتا ہے اس ٹویٹر ہینڈل کو بھی رانا ثناء اللہ ہی آپریٹ کررہا ہے “
ایک صارف نے بچی کی تصویر پوسٹ کرتے ہوئے لکھا “پاکستان کی کم عمر ترین سیاسی قیدی”

تاہم پاکستان مسلم لیگ ن کے صارفین اس کم

عمر ترین قیدی بچی کے خلاف اسلام آباد پولیس کے ناروا سلوک کے حق میں دلائل دیتے ہوئے نظر آرہے ہیں ۔

رضوان احمد

Freelance journalist Twitter account https://twitter.com/real_kumrati?s=09

5 1 ووٹ
Article Rating
سبزکرائب
مطلع کریں
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
تمام کمنٹس دیکھیں
0
Would love your thoughts, please comment.x
%d bloggers like this: