احادیث نبوی ﷺکی اہمیت فتنہ انکار حدیث سے خود بھی بچیں دوسروں کو بھی بچائیں

‏اہمیت احادیث نبوی صلی اللہ علیہ وسلمفتنہ انکار حدیث سے خود بھی بچیے اور دوسروں کو بھی بچائیے

الحمدللہ رب العالمین والصلوۃ والسلام علی خاتم الانبیاء و المرسلین اما بعد : منکرین حدیث کہتے ہیں کہ صرف قرآن پہ عمل کرنا ضروری ہے کیونکہ احادیث کنفرم نہیں ہیں قرآن میں ہیکہ رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی بات پہ عمل کروبتائیں پھر نبی علیہ السلام کی کونسی بات پہ عمل کریںآپ کے نزدیک احادیث کنفرم نہیں ہیں تو پھر قرآن میں یہ حکم کیوں ہےقرآن میں یہ حکم ہونا کہ نبی علیہ السلام کی باتوں پہ عمل کرو یہ اس بات کی واضح دلیل ہیکہ قرآن کیساتھ ساتھ احادیث بھی کنفرم ہیں اور ان پہ عمل کرنا ضروری ہےدوسری بات ، قرآن میں نبی علیہ السلام کو فرمایا گیا ہیکہ نبی علیہ السلام قرآن کی تعلیم دیں گےیعنی قرآن متن ہے اسکو گائیڈ کریں گے نبی علیہ السلام ایک ہوتی ہے اصل کتاب اور پھر اسکی مختلف گائیڈ کی کتابیں ہوتی ہیں جو اصل کتاب کی وضاحت کرتی ہیں تو قرآن اصل کتاب ہے اسکو گائیڈ نبی علیہ السلام نے کیا ہےہم کہتے ہیں کہ احادیث کی کتابیں قرآن کی گائیڈز ہیں قرآن کی گائیڈز کا محفوظ ہونا ضروری ہے کیونکہ قرآن نے نبی علیہ السلام کو فرمایا ہیکہ آپ قرآن کی تعلیم دیں گےنبی علیہ السلام نے تعلیم دی ہے اور قرآنی احکامات کو واضح کردیا ہےاب اگر ہم مان لیں کہ احادیث کی کتب معتبر نہیں ہیں تو پھر قرآن کی وضاحت اور قرآن کی تعلیم کہاں ہے؟ہمیں کیسے پتا چلے گا کہ نماز کا طریقہ کیا ہے ؟ہر لغت ہر زبان میں بہت سے الفاظ ایسے ہوتے ہیں جن کے معانی مختلف ہوتے ہیں لفظ صلوٰۃ کے عربی میں بہت سے مطلب ہیں صلوٰۃ دعا کو بھی کہتے ہیں صلوٰۃ رحمت کو بھی کہتے ہیں صلوٰۃ کا مطلب نماز بھی ہےاسی لیے قرآن کی وضاحت ضروری ہے اور وضاحت کی ذمے داری نبی علیہ السلام کو دی گئی ہے اگرقرآن کی وضاحت کو محفوظ نہیں رکھنا تھا اور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات کو محفوظ نہیں رکھنا تھا تو پھر نبی علیہ السلام کو قرآن کی تعلیم کاحکم کیوں دیامعلوم ہواکہ احادیث کی کتب معتبر ہیں اور احادیث کی رہنمائی سے ہی قرآن کو سمجھاجاسکتاہےاگر بخاری مسلم ترمذی ابوداؤد یہ سب احادیث کی کتابیں معتبر نہیں ہیں تو پھر نبی علیہ السلام نے جو قرآن کی تعلیم دی ہے وہ کہاں ہے ؟کیونکہ قرآنی حکم ہیکہ قرآن کو سمجھنے کیلئے نبی علیہ السلام کی تعلیم ضروری ہےاس تعلیم کے بغیر ہم قرآن کو نہیں سمجھ سکتےجب قرآن کا سمجھنا موقوف ہے تعلیم نبوی پر تو پھر یہ تسلیم کرنا پڑیگا کہ احادیث کی کتب معتبر ہیں اور ان پے عمل کرنا ضروری ہےفی الحال میں بات کرونگا صحاح ستہ کے بارے میں صحاح ستہ پر پاکستان یا ہندوستان کے علماء نے ہی نہیں بلکہ امت مسلمہ نے اعتماد کیا ہےکیونکہ یہ احادیث بغیر تحقیق کے نہیں لکھی گئی ہر ایک حدیث کے ہر ایک راوی کی اچھے طریقے سے جانچ پڑتال کی گئی پھر یہ احادیث تحریر کی گئی ہیںعلم حدیث میں ایک علم ہے اسماء الرجالاسماء الرجال انتہائی مشکل علم ہےجس میں ہر راوی پر جرح و تعدیل کی جاتی جرح و تعدیل کے بعد حدیث کو لکھا گیا ہےسب سے زیادہ احتیاط بخاری شریف میں کی گئ ہے کہ جس حدیث کی روایت کرنے والوں میں سے کسی ایک پر ہلکا سا شبہ بھی ہوتا تو امام بخاری رحمۃ اللہ اس حدیث کو بخاری شریف میں تحریر نہیں کرتے تھےمنکرین حدیث یہ تاثر دیتے ہیں کہ ائمہ محدثین نے بغیر تحقیق کے ہر حدیث کو تحریر کیاحالانکہ ان حضرات نے ایک ایک حدیث کی تحقیق کیلئے دن رات ایک کیا اور مختلف علاقوں میں خود جاکر راویوں کی تحقیق کیانہوں نے اپنی زندگیاں حدیث کو جمع کرنے میں صرف کردیاور ہم آج گھروں میں بیٹھ کر انٹرنیٹ پر سرچ کرکے ان حضرات پر اعتراض کرتے ہیں ائمہ صحاح ستہ کی زندگیاں پڑھ کر تو دیکھیں انہوں دین اسلام کی خدمت میں کیا کیا محنت کی ہےاس حوالے سے آخری بات یہ سمجھ لیں کہ ہر فن اور ہر علم کے ماہرین ہوتے ہیں جیسے ڈاکٹری کی تحقیقات میں بحث کرنے کیلئے ڈاکٹرز اور سائنس میں بحث کرنے کیلئےسائنسدان ہی اہل ہیں ایسے ہی علم حدیث کے بارے میں ائمہ محدثین کی ابحاث اور انکی تحقیقات ہی ہمارے لیے معتبر ہیں ہمیں چونکہ قرآن و حدیث پر مکمل دسترس نہیں ہوتی اور شان نزول و شان ورود کا پتا نہیں ہوتا تو ہم بعض احادیث کو جوڑ توڑ کرکے انکو قرآن کے مخالف قرار دے دیتے ہیںحالانکہ اگر تھوڑی سی تحقیق کرلیں اور علماء کرام سے راہنمائی لے لیں اور سیاق و سباق کو مدنظر رکھتے ہوئے سمجھنے کی کوشش کریںتو سمجھنا مشکل نہیں ہےپرابلم تب ہوتی ہے جب ہم سمجھتے ہیں کہ ہماری دولفظی تحقیق ہی معتبر ہےہمارا ایک بڑا المیہ یہ بھی ہیکہ آجکل ہم سمجھنے کیلئے سوال نہیں کرتے بلکہ خود کو بڑا محقق ثابت کرنے کیلئے اعتراضات کرتے ہیںخود بھی گمراہی والا راستہ اختیار کرتے ہیں اور دوسروں کو بھی لفظوں میں الجھا کر گمراہ کرتے ہیںاللہ تعالیٰ ہمیں قرآن و حدیث پر عمل کرنے والا بناۓ اور قرآن و حدیث کی خدمت کیلئے ہمیں قبول فرمائے آمین ثم آمین والسلام : حافظ محمد احمد

@iamhafizahmad

Jabbli Views
فالو کریں

Jabbli Views

جبلی ویوز ایک میگزین ویب سائٹ ہے، یہ ایک ایسا ادارہ ہے جس کا مضمون نگاری اور کالم نگاری کو فروغ دینا اور اس شعبے سے منسلک ہونے والے نئے چہروں کو ایک پلیٹ فارم مہیا کرنا ہے،تاکہ وہ اپنے ہنر کو نکھار سکیں اور اپنے خیالات دوسروں تک پہنچا سکیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: