جب سگریٹ جلتا ہے ،کینسر پلتا ہے

تمباکو نوشی سے 20 مختلف اقسام کے کینسر ہونے کا خدشہ بڑھ جاتاہے۔ شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اینڈ ریسرچ سینٹر میں زیرِ علاج تقریباً %40 مرد ایسے کینسر کا شکار ہیں جس کی وجہ تمباکو کا استعمال ہو سکتا ہے۔ تمباکو نوشی سے پرہیز کینسر سے بچائو کا بہترین راستہ ہے۔ اپنی زندگی تباہ ہونے سے بچائیں۔

یاد رکھیں! تمباکو نوشی کی ہر قسم نقصان دہ ہے۔تمباکو نوشی صرف دل اور پھیپھڑوں کے امراض کی ہی وجہ نہیں بنتی بلکہ اس سے ذیابیطس ہونے کا امکان بھی 30 سے ​​40 فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔ساتھ ساتھ یہ عادت ذیابیطس پر کنٹرول نہیں رہنے دیتی اور مریض کو ایک عام انسان سے زیادہ انسولین کی ضرورت پڑنے لگتی ہے۔تمباکونوشی دل ، پھیپھڑوں کے دائمی امراض کے علاوہ کینسر جیسے مہلک مرض کا سبب بھی بن سکتی ہے۔ لہذا تمباکو کا ہر قسم کا استعمال ترک کرنا چاہیئے۔

ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان میں تقریبا 2 کروڑ افراد کسی نہ کسی شکل میں تمباکو کا استعمال کرتے ہیں اور ہر سال ایک لاکھ سے اوپر افراد تمباکو نوشی سے کی وجہ سے جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔ تمباکو نوشی کرنے والوں کو ہارٹ اٹیک، دمہ، پھیپھڑے اور دیگر اعضا کا کینسر ہونے کے امکانات بہت زیادہ ہوتے ہیں اور تمباکو نوشی دس سے اوپر طرح کے کینسر (پھیپھڑا، زبان ، منہ ،معدہ، چھوٹی آنت، بڑی آنت، بریسٹ کینسر وغیرہ) کی وجہ بن سکتی ہے۔

ہمارا مذہب کے مطابق بھی تمباکو نوشی فضول خرچی اور انسانی صحت کے نقصان کی وجہ سے حرام کاموں کے زمرے میں آتی ہے۔ آج کل نئی نسل فیشن کے طور پر تمباکو بذریعہ سگریٹ، شیشہ، سگار، ای-سگریٹ وغیرہ کے طور پر اپنا رہی ہے جس کی حوصلہ شکنی کی جانی چاہیئے۔ گھر میں موجود ایک تمباکو نوش کا چھوڑا ہوا دھواں چھوٹے بچوں، بزرگوں اور حاملہ خواتین کے لئے زھر قاتل ہے۔اگر تمباکو نوشی کی لت چھوڑنے میں دشواری ہو تو ڈاکٹرز کے مشورے اور انکی تجویز کردہ ادویات کی مدد سے اس لت سے چھٹکارہ پایا جا سکتا ہے۔ آئیے ہم سب مل کر تمباکو نوشی کی لت کے خلاف آواز بلند کریں۔

تحریر: سید اجمل نگار

رائیٹر کو فالو کریں

Jabbli Views
فالو کریں

Jabbli Views

جبلی ویوز ایک میگزین ویب سائٹ ہے، یہ ایک ایسا ادارہ ہے جس کا مضمون نگاری اور کالم نگاری کو فروغ دینا اور اس شعبے سے منسلک ہونے والے نئے چہروں کو ایک پلیٹ فارم مہیا کرنا ہے،تاکہ وہ اپنے ہنر کو نکھار سکیں اور اپنے خیالات دوسروں تک پہنچا سکیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: